ناد سُوَرَم ایک نہایت ہی پیچیدہ اور پرانا موسیقی آلہ ہے، جو کہ ۱۳ویں صدی سے لے کر آج تک اپنی موجودہ شکل میں ہمارے سامنے ہے۔ ناد سُوَرَم شمالی ہندوستان کے متعدد معاشروں کی ثقافت کا ایک نہایت اہم حصہ ہیں اور اس ساز کو شادیوں میں، مندروں میں اور تہواروں کے موقع پر اکثر و بیشتر بجایا جاتا ہے۔ نادسورم بنانا نہایت مہارت والا اور نازک کام ہے؛ اسے روایتی طور پر بنانے والے پورے ساز کو ہاتھ سے بناتے ہیں۔

اس ساز کو بنانے والے چند استاد کاریگر نرسنگھا پیٹئی میں رہتے ہیں، اور یہاں پر کئی گھرانے ایسے ہیں، جن کے یہاں یہ ہنر نسلوں سے چلا آ رہا ہے۔

مزید جاننے کے لیے یہاں کلک کریں: نرسنگھا پیٹئی کے ناد سورم بنانے والے

Mohd. Qamar Tabrez is PARI’s Urdu/Hindi translator since 2015. He is a Delhi-based journalist, the author of two books, and was associated with newspapers like ‘Roznama Mera Watan’, ‘Rashtriya Sahara’, ‘Chauthi Duniya’ and ‘Avadhnama’. He has a degree in History from Aligarh Muslim University and a PhD from Jawaharlal Nehru University, Delhi. You can contact the translator here:

Aparna Karthikeyan

Aparna Karthikeyan is an independent multimedia journalist. She documents the vanishing livelihoods of rural Tamil Nadu and volunteers with the People's Archive of Rural India.

Other stories by Aparna Karthikeyan