ہر سال، شمالی بہار میں مانسون کی بارش لاکھوں لوگوں کو متاثر کرتی ہے، اور سہرسہ ضلع میں اگست سے نومبر تک کشتیوں کی مانگ میں بے پناہ اضافہ ہو جاتا ہے۔

اس مانگ کو پورا کرنے کے لیے کشتی بنانے والے رات دن کام کرتے ہیں۔ اس موسم میں وہ دو دنوں میں ایک کشتی تیار کر لیتے ہیں۔

بارش اور سیلاب سے متاثر ہونے والے لوگوں کے لیے کشتیاں محفوظ ’خشک میدان‘ کے طور پر کام کرتی ہیں، اور انھیں پناہ لینے، نقل و حمل کرنے، سامان رکھنے اور اسی قسم کے مختلف استعمال کے لیے کیا جاتا ہے۔


02-PARI_1_vote-for-boat_spc-SPC-Vote for Boat.jpg


03-PARI_2_vote-for-boat_spc-SPC-Vote for Boat.jpg


04-DSC_3117-SPC-Vote for Boat.jpg


یہاں پر جو فلم دکھائی جا رہی ہے اس کی شوٹنگ جولائی سے اگست ۲۰۱۵ میں کی گئی تھی۔ اسے سیانٹونی پال چودھری کے ۲۰۱۵ کے پاری فیلوشپ کے تحت فلمایا گیا تھا۔

کیمرہ اور ایڈیٹنگ: سمبت دت چودھری، ایک خود کار سنیماٹوگرافر اور ایڈیٹر۔ وہ گزشتہ دو برسوں سے کھیتی باڑی، صحت عامہ اور تعلیم سے متعلق اسٹوریز پر کام کرتے رہے ہیں۔

محمد قمر تبریز 2015 سے ’پاری‘ کے اردو/ہندی ترجمہ نگار ہیں۔ وہ دہلی میں مقیم ایک صحافی، دو کتابوں کے مصنف، اردو ’روزنامہ میرا وطن‘ کے نیوز ایڈیٹر ہیں، اور ماضی میں ’راشٹریہ سہارا‘، ’چوتھی دنیا‘ اور ’اودھ نامہ‘ جیسے اخبارات سے منسلک رہے ہیں۔ ان کے پاس علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے تاریخ اور جواہر لعل نہرو یونیورسٹی، دہلی سے پی ایچ ڈی کی ڈگری ہے۔ You can contact the translator here:

Sayantoni Palchoudhuri

سیانٹونی پال چودھری ایک آزاد فوٹوگرافر اور پاری کی سال ۲۰۱۵ کی فیلو ہیں۔ ان کا کام بنیادی طور پر ہندوستان بھر میں ترقی، صحت اور ماحولیاتی امور پر مبنی مختلف موضوعات کی دستاویز بنانا ہے۔

Other stories by Sayantoni Palchoudhuri