’کام ہی کام، عورتیں گُمنام‘، پوری طرح درست کی ہوئی، منجمد تصویروں کی ایک آن لائن نمائش ہے۔ یہ ویڈیو ناظرین کو اس پوری نمائش کی سیر کرائے گا، جہاں اصلی تصویریں دکھائی گئی ہیں اور ساتھ ہی ان کے نیچے متن کو مضمون کی شکل میں پیش کیا گیا ہے۔ یہ ساری تصویریں پی سائی ناتھ نے ۱۹۹۳ سے ۲۰۰۲ کے درمیان ہندوستان کی ۱۰ الگ الگ ریاستوں میں کھینچی تھیں۔ یہ تصویریں موٹے طور پر اقتصادی اصلاح کی پہلی دَہائی اور قومی دیہی روزگار گارنٹی اسکیم کے شروع ہونے سے دو سال پہلے تک کی ہیں۔

محمد قمر تبریز 2015 سے ’پاری‘ کے اردو/ہندی ترجمہ نگار ہیں۔ وہ دہلی میں مقیم ایک صحافی، دو کتابوں کے مصنف، اردو ’روزنامہ میرا وطن‘ کے نیوز ایڈیٹر ہیں، اور ماضی میں ’راشٹریہ سہارا‘، ’چوتھی دنیا‘ اور ’اودھ نامہ‘ جیسے اخبارات سے منسلک رہے ہیں۔ ان کے پاس علی گڑھ مسلم یونیورسٹی سے تاریخ اور جواہر لعل نہرو یونیورسٹی، دہلی سے پی ایچ ڈی کی ڈگری ہے۔ You can contact the translator here:

پی سائی ناتھ ’پیپلز آرکائیو آف رورل انڈیا‘ کے بانی ایڈیٹر ہیں۔ وہ کئی دہائیوں سے دیہی ہندوستان کے رپورٹر رہے ہیں اور ’ایوری باڈی لوز گُڈ ڈراٹ‘ نامی کتاب کے مصنف ہیں۔ ان سے یہاں پر رابطہ کیا جا سکتا ہے: @PSainath_org

Other stories by P. Sainath